وہ دل میں چاہتوں کے بیج ہر قدم پہ بُو گ

وہ دل میں چاہتوں کے بیج ہر قدم پہ بُو گیا
ہوا چلی تو خو شبو کا سفر آسان ہو گیا
بدن کے جوڑ جوڑ میں تھکاوٹوں کا راج تھا
میں اس کی زلفیں تان کر مزے کی نیند سو گیا
گلابیوں کا اس قدر شغف کہاں تھا مجھ کو پر
مری نگاہ میں کوئی گلاب رُت سمو گیا
مہک رہا ہوں آج کل میں سر تا پا تو کیا کروں
کہ بارشوں میں چاہتوں کی وہ مجھے بھگو گیا
زمین آسمان کی تھمی ہوئیں ہیں گردشیں
میں اُس میں کھو گیا کہیں تو وہ بھی مجھ میں کھو گیا
عجیب دلنشیں سے خواب دیکھتا ہوں ارفع جی
دھنک کو اُوڑھ کر مری پلک تلے وہ سو گیا

(By Rana Kashif Saleem Arfa)
This entry was posted in Poetry. Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s